مختصر قراٰنی معلومات

قراٰن مجید اﷲ تعالی کی آخری کتاب ہے جو حضرت جبریل علیہ السلام کے ذریعہ حضور پُرنور ﷺ پر 23 سال کے عرصہ میں وقتاً فوقتاً حسب ضرورت و مصالح نازل ہوا ، سب سے پہلی وحی آپ ﷺ پر 40 سال کی عمر شریف میں سورہ علق کی ابتدائی پانچ 5 آیتیں نازل ہوئیں ، قراٰن مجید کے جملہ تیس 30 پارے ،سات۷ منازل اور ایک سو چودہ 114 سورتیں ہیں ، باختلاف روایات جن میں ستاسی 87 مکی سورتیں اور ستائیس 27 مدنی سورتیں ہیں باختلاف روایات قراٰن کریم میں پندرہ15  آیات سجدہ ہیں ، امام اعظم ؓ اور امام شافعی ؒ باختلافات مقامات چودہ 14 آیات سجدہ پر متفق ہیں ، تلاوت آیت سجدہ پر سجدہ کرنا واجب ہے ۔

حضرت سیدنا صدیق اکبر رضی اﷲ عنہ کے عہد خلافت میں، حضرت سیدنا عمر رضی اﷲ تعالی عنہ کی تحریک سے قراٰن کریم کو جمع کرنے کا سلسلہ شروع ہوکر حضرت سیدنا عثمان غنی رضی اﷲ عنہ کے عہد خلافت میں مکمل ہوااور کتابی شکل دی گئی ۔

قراٰن مجید کے اعراب (زبر ، زیر ، پیش ) کی ابتداء حضرت سیدنا علی کرم اﷲ وجہہ کے عہد خلافت میں ہوئی ۔پاروں اور منازل کی ترتیب بھی صحابہ کرام رضوان اﷲ علیہم أجمعین کے زمانہ میں ہی ہوئی ۔

اﷲ تعالی سے دعاء ہے کہ اس کلام پاک کو اس کے حقوق کے ساتھ تلاوت کرنے اور اس میں غور و فکر کرنے اور اس کی تعلیمات پر ہم تمام کو عمل کرنے کی توفیق عطاء فرمائے ۔ آمین

و صلی اﷲ تعالی و سلم علیہ و آلہ و أصحابہ أجمعین

 

٭٭٭