علم دین کی اہمیت

اسلام میں علم دین کی بڑی اہمیت ہے، یہ جہل کے مقابلے میں ہے۔علم دین سراپا نور وہدایت ہے اور جہل سراپا کفروضلالت ہے۔ اسلام نے ہمیں علم دین کے حصول کا حکم دیا ہے،قرآ ن وحدیث میں علم دین کی بڑی اہمیت وفضیلت بیان کی گئی ہے اور ان میں علم کی فضیلت اور اہل علم کا بڑا درجہ ومقام اجاگر کیا گیا ہے۔اللہ تعالی کا فرمان ہے: یَرْفَعِ اللَّہُ الَّذِینَ آمَنُوا مِنکُمْ وَالَّذِینَ أُوتُوا الْعِلْمَ دَرَجَاتٍ (المجادلۃ:11) ترجمہ:اور اللہ تعالی تم میں ان لوگوں کو جو ایمان لائے اور جو علم دیے گئے ہیں درجے بلند کردے گا۔عَنْ أَبِيْ ہُرَےْرَۃَ قَالَ: سَمِعْتُ رَسُوْلَ اللہ ِ صَلَّی اللہ ُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ ےَقُوْلُ: الدُّنْےَا مَلْعُوْنَۃٌ، مَلْعُوْنٌ مَا فِےْھَا، اِلّا ذِکْرَاللہ ِ، وَمَا وَالاہُ، وَعَالِمٌ أَوْ مُتَعَلِّمٌ۔(ترمذي، کتاب الزھد، باب ما جاء في ھوان الدنیا علی)حضرت ابوہریرہ رضی اللہ تعالی عنہ سے روایت ہے انہوں نے فرمایا کہ میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ و سلم کو یہ فرماتے ہوئے سنا کہ: دنیا ملعون ہے اور دنیا کی ہر چیز ملعون ہے سوائے اللہ تعالی کے ذکر اور اس کی اطاعت کے۔ اور عالم اور طالب علم۔ بلاشبہ ہمارے لئے عصری علوم کی بھی ضرورت ہے لیکن اس سے کہیں زیادہ علم دین کی ضرروت ہے۔اس لئے علم دین کا ہرحال میں حصول کریں جوکہ ہمارا اسلامی فریضہ ہے۔

 ٭٭٭